Introduction to Lakes(جھیلیں)

جھیلیں

آپ ایک جھیل پر بہت زیادہ تفریح ​​کرسکتے ہیں۔ بہت سے لوگ جھیلوں کے ساتھ تعطیلات کا مزہ دوبالا کرنے کے لیے جاتے ہیں۔ آپ تیراکی پر جاسکتے  ہیں ۔آپ کشتی پر باہر جا سکتے ہیں۔ آپ مچھلی پکڑ سکتے ہیں۔

کچھ جھیلیں بہت بڑی ہیں۔ وہ ایک سمندر کی طرح بڑی لگتی ہیں۔ آپ سب سے بڑی جھیلوں کے آر پا  نہیں دیکھ سکتے ہیں۔

ایک جھیل کیا ہے؟

بڑی جھیلیں اور چھوٹی جھیلیں زمین میں  پانی میں بھری ہوئے پیالوں کی طرح ہیں۔ جھیلیں سمندر کا حصہ نہیں ہیں۔

زیادہ تر جھیلیں تازہ پانی سے بھری ہوئی ہیں ، لیکن کچھ نمکین پانی سے بھرا ہوا ہے۔ یوٹاہ میں نمک  کی عظیم جھیل پانی سے بھری ہوئی ہے جو سمندر کے پانی سے کہیں زیادہ نمکین ہے۔ نمک اس جھیل میں بہنے والی ندیوں سے آتا ہے۔ جب اس جھیل میں پانی بخارات بن جاتا ہے (گیس میں بدل جاتا ہے) تو نمک پیچھے رہ جاتا ہے۔

جھیلیں کس طرح بنتی ہیں؟

جھیلیں کبھی کبھی چٹان اور مٹی کے پھسلنے یا حرکت کرنے کی وجہ سے بنتی ہیں۔ برف کے بڑے میدانوں کی وجہ سے زیادہ تر جھیلیں تشکیل پاتی ہیں جنہیں گلیشیر کہا جاتا ہے۔ برف کی حرکت کی وجہ سے  تو گلیشیروں نے زیادہ تر جھیلیں کھڑی کیں۔ برف کے نیچے والی برف جم کر پتھر بن جاتی ہیں ۔ گلیشیر چٹان کو لے کر چلتی ہیں جس وجہ سے زمین میں کٹوری جیسی شکل بن جاتی ہے اور بارش کے پانی سے بھر جانے کے بعد جھیل بن جاتے ہیں۔

گلیشیرز نے شمالی امریکہ میں پانچ عظیم جھیلیں کھڑی کیں۔ عظیم جھیلیں بہت بڑی ہیں۔ بڑے جہاز بڑی جھیلوں پر سفر کرتے ہیں۔ ایک عظیم جھیلوں میں سے ایک جھیل سُپرئیر ، دنیا کی تازہ پانی کی سب سے بڑی جھیل ہے۔

دور شمال میں بہت سی جھیلیں ہیں ، کیوں کہ ہزاروں سال پہلے شمال میں بہت سے گلیشیر تھے۔ دنیا کی قریب نصف جھیلیں کینیڈا میں ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:        جواہرات کیا ہوتے ہیں اور کیسے حاصل ہوتے ہیں

جھیل میں پانی کہاں سے آتا ہے؟

جھیل کا پانی بارش یا برف سے آتا ہے۔ بعض اوقات بارش یا برف جھیل میں گرتی ہے۔ کبھی کبھی بارش یا برف ندیوں یا ندیوں کو بنا دیتی ہے۔ ندیوں اور نہریں جھیلوں میں بہہ سکتی ہیں۔

ایک جھیل میں کتنا پانی رہتا ہےیہ  ہر وقت بدل جاتا ہے۔ بہت زیادہ بارش یا برف ایک جھیل کو اس وقت تک پُر کرسکتی ہے جب تک کہ اس میں بہاؤ نہ آجائے۔ بہت کم بارش یا برف کی وجہ سے جھیل سوکھ جا سکتی ہے۔

Related

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *